Skip to main content

صداقت [ a/3 ]

web - GSirg.com


صداقت

اس بشر دنیا کے جنمداتا باپ خدا نے متعدد قسم کے مخلوق پر مشتمل ہے | ان تمام رچناین میں انسانی کو بہترین مانا گیا ہے | اس دنیا کی ہر انسان اپنی زندگی خوشحال اور خوشی میں خرچ کرنا چاہتا ہے، جس کے لئے وہ متعدد قسم کی کوشش کر رہا ہے اس کی پوری زندگی اس خوشی کو حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے. یہاں یہ حقیقت قابل غور ہے کہ کیا انسان کو اپنی زندگی میں خوشی حاصل ہو پاتے ہیں | کیا انسان اپنی کوششوں سے خوشی حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کرتا ہے؟ یہ ایک فکر مند سوال ہے.



ایک سکین کے دو اطمینان خوشی اور اداس


حقیقت میں، ہر انسان کی زندگی میں خوشحالی اور غم دونوں آ رہے ہیں اور جا رہے ہیں. مصیبت کے بعد، مصیبت اور اداس کے بعد، خوشی خوشی سے آتی ہے. یہ فطرت کے عالمی اصول ہے. اگر کسی کو صرف زندگی میں خوشی ہوتی ہے، تو شاید یہ ہوسکتا ہے کہ یہ خوشحالی کا احساس ہے. لیکن آہستہ آہستہ اس انسان کا لطف سست محسوس کرنا شروع ہو گا. اس کی وجہ سے، خوشی سے آنے والی خوشحالی آہستہ آہستہ کم ہوگی، اور آخر میں ان کی زندگی پریشان ہو جائے گی. وقت کے ساتھ ساتھ انسانی کی یہ سكھانبھوت بھی صفر ہوتی چلی جائے گی | ایسی صورت میں دکھ ہی ہے، جو کسی کی زندگی میں آکر، اس خوشیوں کو دوبارہ انسٹال کرتے رہتے ہیں | اگر کسی کی زندگی میں دکھ نہ آئے، تب اس کی زندگی میں خوشیوں معرفت نہیں ہو سکے گی | ٹھیک اسيپركار اسی طرح اگر زندگی میں خوشی نہ آئے تو دکھوں کا احساس نہیں ہو سکتی ہے | اگر اس نقطہ نظر سے دیکھا گیا تو، خوشی اور اداس زندگی زندگی اتفاق کے دو پہلو ہیں، اس سے انکار نہیں کیا جا سکتا.



انسانی زندگی میں مصیبت


اس دنیا میں ہر مخلوق چاہتا ہے کہ اس کی جان خوشیوں سے بھرا ہوا ہے. وہ تصور نہیں کرنا چاہتا کہ ان کی زندگی میں بھی درد ہے. یہی وجہ ہے کہ ہر انسان کو مصیبت سے بھرا ہوا ہے. انسان ان مصیبتوں سے نجات حاصل کرنے اور خوشی کو اختیار کرنے کے لئے مختلف قسم کی کوششوں کی کوشش کرتے ہیں. ان سے ریٹائرمنٹ کے لئے اور زندگی میں خوشیوں کی وصولی کے لئے ہر انسانی گنت کوشش بھی دیکھے جاتے ہیں، لیکن کیا ایسا ممکن ہو پاتا ہے | یقینی طور پر ایسا نہیں ہوتا. لیکن ستم ظریفی یہ ہے سکھ صرف گنے چنے لوگوں کو ہی مل پاتا ہے | یہ باقی لوگوں کے ساتھ نہیں ہوتا. اس کی تمام زندگی غیر منسلک، ناکامی، عدم اطمینان اور غفلت کے درمیان گزر گئی ہے. اکثر دیکھنے میں آتا ہے کہ لوگ لذت کے لئے بھٹکتے ہی رہتے ہیں، لیکن ان کو زیادہ مقدار میں دکھ ہی مل پاتے ہیں | یہ ہر زمینی مخلوق کا درد ہے اور یہ درد بھی ہے.



خوشی کی تلاش میں


اس دنیا کا وہ ہر مخلوق کو آپ کی زندگی میں صرف خوشیوں کو تلاشتا رہتا ہے | وہ اس حقیقت کو بھول جاتا ہے کہ خوشی سے باہر نہیں آتی، لیکن مصیبت کا ذریعہ ہمارے اندر اندر ہے. ہم چاہے کتنا بھی دکھوں کی وجہ کو کسی واقعہ یا صورت میں ڈھونڈنا چاہے، تو بھی ہمیں کسی بھی پوزیشن اور صورت میں اس میں کامیابی نہیں مل پاتی ہے | کیونکہ بدقسمتی کا بنیادی سبب ہمارے دماغ میں ہے. آپ تلاش کرنے کی وجہ سے بہت سے مل سکتے ہیں، لیکن وہ حل نہیں کیا جا سکتا. مصیبت کا حل صرف حالات کو بدلنے سے نہیں بلکہ صرف دماغ کی حالت کو تبدیل کر کے. ہمارے ذہن کی حالت جب آلودہ اور آلودہ ہو جاتی ہے، تب ہی ہماری زندگی میں دکھ آنے لگتے ہیں | کسی بھی حالت میں ان سے بچنے کے لئے ممکن نہیں ہے. اور کوئی حل نہیں ہے.



غم کے لئے علاج


اگر انسانی زندگی میں دکھوں سے نجات پانا ہے، تو اسے اپنے نقطہ نظر میں تبدیلی کرنا ہی ہوگا | اسے اس نقطہ نظر کو گہری سے اپنے دل میں بٹھانا ہی ہوگا کہ اس کی زندگی میں آئے دکھوں کے لئے وہ خود ذمہ دار ہے | جو کچھ بھی باہر ہو رہا ہے، یہ صرف سائے کے اندر ہے. اسی وجہ سے اسے اپنے سر پر مصیبت کا ذمہ دار ہونا چاہئے. اس سے بچنے کے لئے ممکن نہیں ہے. زندگی میں دکھ ہو یا سکھ، ہرش ہو یا پرانی یادوں اور احترام ہو یا ذلت، ان سب کو یکساں خصوصیات قبول ہی ہوگا، اور آپ کے حالات کی ذمہ داری اس کے خود پر ہی لینی ہوگی | اسے ہمیشہ اس بات کو ذہن میں رکھنا چاہیے کہ اس کی مصیبت ان کے اعمال کے نتیجے میں ہے. اس قسم کی ذمہ داری لے لینے پر اس کی زندگی کی طرف رویہ ہی بدل جائے گا | اس کے ساتھ ساتھ، خطرناک حالات سے لوہے لینے کی طاقت بھی آتی ہے. ایسا کرنے سے، کسی کو اپنی زندگی میں مصیبتوں سے دور رکھ سکتا ہے. ہر شخص جو ایسا نہیں کرتا وہ غم کی الجھن میں پھنس جاتا ہے.



دماغ میں تبدیلی کی ضرورت ہے



اس حقیقت سے کبھی بھی منہ نہیں موڑا جا سکتا ہے کہ زندگی میں دکھ صرف ان کی زندگی میں پائے جاتے ہوتا ہے، جو اپنی ذمہ داری لینا جانتے ہیں | آپ غلطیوں، غلطیوں اور برے کاموں کی ذمہ داری لے کر ہی ہم اپنی زندگی میں دکھوں کو کم کرکے ہی آپ کی زندگی کو سكھپوروك خرچ کر سکتے ہیں | دوسروں پر اپنی ذمہ داری ڈال کر، ہم خود کبھی بھی تبدیلی نہیں کر سکتے ہیں، اور نہ ہی ہم تبدیلی شروع کر سکتے ہیں. یہ صرف ان لوگوں کی طرف سے کیا جاتا ہے جو ان کے غموں کا سبب نہیں ڈھونڈتے بلکہ ان کے اندر اندر تلاش کرتے ہیں. صرف ایسا کرنے کے بعد، وہ اسے بہتر بنانے کے لئے کافی موقع ملتا ہے. لہذا، حالات کو ذہنیت تبدیل کرنے کی کوشش نہیں کرنا چاہئے. جیسے ہی انسانی اپنا اس کے لیے موزوں اپنا نقطہ نظر مختلف ہوتی ہے، اور اسی کے مطابق کوشش کرتا ہے، تب ہی اس کی زندگی میں حل خود جمع ہو جاتا ہے | اس کے بعد،

The End

web - GSirg.com

Comments

Popular posts from this blog

कबिरा शिक्षा जगत् मा भाँति भाँति के लोग।।भाग दो।।

प्रिय पाठक गणों आपने " कबीरा शिक्षा जगत मां भाँति भाँति के लोग ( भाग-एक ) में पढ़ा कि श्रीमती रामदुलारी तालुकेदारिया इण्टर कालेज सेंहगौ रायबरेली की प्रधानाचार्या, प्रबंधक, लिपिकों आदि के द्वारा किस प्रकार शिक्षा सत्र 2015--16 तथा शिक्षा सत्र2014--15 मे किस प्रकार लगभग उन्यासी छात्रों को फर्जी ढ़ंग से प्रवेश दिलाया गया । बाद मे इन्हीं छात्रों को अगले वर्ष इण्टर कक्षा की परीक्षा दिला दी गई। इसके लिए फर्जी कक्षा 12ब3 बनाई गई। बाकायदा फर्जी छात्रों का उपस्थिति रजिस्टर भी बनाया गया। परन्तु सभी छात्रों से प्रथम तथा द्वितीय वर्ष की कक्षाओं मे निर्धारित विद्यालय फीस लेने के बावजूद भी इसका विद्यालय के रजिस्टर पर इन्दराज नही किया गया। यह अनुमानित फीस लगभग साढ़े चार लाख रुपये के आसपास थी जिसे उपरोक्त अधिकारियों / विद्यालय के शिक्षा माफियाओं द्वारा अपहृत / गवन कर लिया hi गया। यथोचित कार्रवाई हेतु इस सम्पूर्ण विवरण को प्रार्थना पत्र मे लिखकर अपर सचिव के क्षेत्रीय कार्यालय इलाहाबाद को दिनाँक 25 /05 2016 को भेजा गया।
अब हम आपको इसके शर्मनाक पात्रों का परिचय करवा देते हैं।
       😢शर्मनाक…

[ q/9 ] Tratamentul; O alternativă unică la sterilizare

web - gsirg.com

 Tratamentul; O alternativă unică la sterilizare

 Fiecare creatură din lume care a venit în această lume, el a câștigat definitiv copilarie, adolescenta, maturitate si batranete | Dintre acestea, dacă părăsim copilăria, atunci în fiecare etapă a vieții, fiecare creatură suferă de dorința sexuală. Cu excepția unui om determinat generație apel la alte creaturi, dar omul este o ființă care, în 12 luni ale anului, 365 de zile, 24 de ore, poate cicălitoare sex în orice moment | Cea mai dificilă sarcină a ființelor umane în această lume este să câștige "Cupid". Fiecare bărbat și femeie din această lume este absorbit de toți muncitorii și începe să facă nenorociri teribile în această lume. Se estimează că doar 70% din criminalitatea mondială este legată de acest lucru.


 Libido o tulburare puternică


  Cauza nașterii diferitelor tipuri de infracțiuni este dorința. Femeile și bărbații care suferă de această dorință sexuală nu ezită să facă diferite tipuri de crime în ac…

सजा

web - gsirg.com


सजा
एक प्रतीकात्मक क्षेपक जो आपकी सोंच बदल देगा
⧭किसी स्थान पर एक बहुत ही प्रसिद्ध महात्मा रहा करते थे |उनकी ख्याति उस क्षेत्र के आसपास फैली हुई थी |ज्ञानी , धार्मिक और विद्वान होने के कारण , उस क्षेत्र के कई जिज्ञासु पुरुष , उनके शिष्य बन गए | उनके शिष्यों में एक शिष्य ने , अपने गुरु के आशीर्वाद से , जब सभी प्रकार की शिक्षाएं प्राप्त कर ली , तो गुरु की आज्ञा प्राप्त कर , वह जन कल्याण के लिए बाहर भ्रमण की सोचने लगे | गुरुजी ने उनके मन में छिपी परोपकार की भावना को जानकर , उन्हें अपने आश्रम से सहर्ष , आशीर्वाद देते हुए खुशी खुशी अन्यत्र भ्रमण करने की इजाजत दे दी | गुरु की आज्ञा पाकर महात्मा जी देशाटन को निकल पड़े | एक जगह पर मनोरम स्थान देखकर , उन्होंने एक कुटिया बना ली | महात्मा जी ज्ञानी पुरुष तो थे ही इसलिए उनकी भी प्रशंसा चारों को फैल गई |

⧭महात्मा जी की कुटिया के पास के एक गांव में एक वृद्ध महिला रहती थी | एक समय उसका बेटा बहुत बीमार पड़ गया | उस बुढ़िया ने अपने बेटे की हर संभव चिकित्सा की , परंतु उसे कोई लाभ नहीं मिला | तब गांव वालों ने उ…