Skip to main content

[ s/03 ] مذہب؛ ابدی خوشی کی خدا

کوڈ - 03


  ویب - gsirg.com


 مذہب؛ ابدی خوشی کی خدا


 جو دنیا میں خوشی کی خواہش نہیں کرتا. یہی ہے، یہاں پیدا ہونے والا ہر مخلوق صرف خوشی چاہتا ہے. چاہے انسان، جانور اور جو خاموش جانور ہو، اس کی پوری خواہش کچھ شکل میں رہتی ہے. پرندوں کی طرف سے ایک پرندوں کو لے کر، درختوں کی شاخوں پر بیٹھ کر، دوسروں کو چومنے، موڑنے اور عطیہ وغیرہ وغیرہ، تمام کاموں کو صرف خوشگوار کرنے کے لۓ کچھ لیکن کوشش کرنے کے لۓ. اسی طرح، جانوروں کے مذاق میں، ارد گرد چل رہا ہے اور نوکریوں کو بھرنے اور تیز رفتار سے چلنے کے لئے صرف کچھ خوشی حاصل کرنے کے لئے کیا جاتا ہے.


  انسانی خوشی


 جب اس دنیا میں ہر مخلوق خوشحالی حاصل کرنے کی کوشش کرتا ہے، تو پھر انسان کو پیچھے کیوں رہنا چاہئے، اس کی خوشی کو حاصل کرنے کے لئے بھی بہت اچھا کام ہوتا ہے. کیونکہ انسان خود کو دنیا کے تمام مخلوقات میں خدا کے سب سے بہترین ذہین اور جوگانیان سمجھتا ہے. لہذا وہ سمجھتے ہیں کہ، اس کی ابدی خوشی اور مضبوط انسان کی خوشی بھی. لہذا، خوشی حاصل کرنے کے لئے، وہ حاصل کرتا ہے اور زندگی، دولت اور زندگی میں مختلف مفید اشیاء کماتا ہے. ایسا کرنے کی وجہ سے، وہ جسمانی زندگی اور مادی خوشحالی حاصل کرنے کی ضرورت کو سمجھتا ہے، اور یہ بھی ضروری ہے. لیکن، ان کی کوششوں کے ساتھ، وہ حقیقی خوشی حاصل کر سکتا ہے، شاید نہیں. حقیقت میں، لطف اندوز مادوں سے موصول ہونے والی جسمانی خوشحالی کی حد جسمانی جسم اور جسمانی زندگی کے قریب ہی ختم ہو جاتی ہے. اس کا براہ راست نتیجہ یہ ہے کہ جسمانی خوشحالی حاصل کرنے کے بعد بھی، وہ شخص ناگزیر، پریشان اور غیر مستحکم ہے. آخر میں، مختلف قسم کے خوشحالیوں میں رہنے کے بعد، مختلف قسم کے خوشبووں کے جسمانی خوشحالی سے دور ہونے کے بعد، انسان بھی کچھ محسوس نہیں کرتا. اس کی تمام زندگی اس دیوتا کی قبر کے پیچھے چل رہی ہے. اس طرح، اس کی قیمتی اور قیمتی زندگی گزرتی ہے اور صفر بن جاتا ہے.


 انسانی زندگی کے لئے ناقابل اعتماد نقصان


 غیر حقیقی خوشی کے احساس میں انسانی زندگی کا سب سے بڑا نقصان ہے. کیا انسانی زندگی کسی دوسرے کا نقصان پہنچ سکتا ہے؟ شاید نہیں. لہذا اسے اب یہ جاننا چاہئے اور اس کو قبول کرنا چاہئے کہ اس نے ابھی تک کھو دیا ہے. اس کو بھول کر، حقیقی خوشی کے لئے اب تک تاخیر نہ کرو. کیونکہ مختلف خوشی سے حاصل ہونے والے خوشی ابدی نہیں ہے، بلکہ موت. دنیا کی غیر حقیقی خوشی حساس اور عارضی ہے. ان کو حاصل کرنے یا وصول کرنے کے باوجود، اگرچہ ہماری خواہشات آخر تک ناقابل اعتبار رہتی ہیں، کیونکہ ان کو حاصل کرنے کی خواہش ہمیشہ ہی ہمارے دماغ میں ہے. جیسا کہ آگ میں کسی بھی چیز کا جلانا آگ بجھانا نہیں ہے، لیکن یہ تیزی سے نظر انداز کرتا ہے. اسی طرح، ہر انسان میں سوکرو کی شرح خوشحالی حاصل کرنے کے بعد، ان کو حاصل کرنے کے لئے حوصلہ افزائی میں اضافہ جاری ہے. انسانی دل کی یہ خواہش کبھی باندھنے یا بجائے جانے والا نہیں ہے. آخر میں، یہ بھی کہا جا سکتا ہے کہ مواد چیزوں اور جسمانی خوشیوں کے لطف کے لئے لامتناہی دیر سے کنکریٹ فارم میں کچھ بھی حاصل نہیں کیا جاسکتا ہے.


 زندگی کو برباد نہ ہونے دو


 اس دنیا میں تمام انسانوں کو بوڑھےوں کی جیونی پر نظر ڈالنا چاہئے. ایسا کرنے سے، آپ کو بہت سے لوگوں کو مل جائے گا جنہوں نے اپنی پوری زندگی بچپن سے پرانے عمر سے خرچ کی ہے، مال کی خوشحالی کے پیچھے چل رہے ہیں. اس نے اپنی پوری زندگی کو مال، دولت اور مختلف قسم کے خواہشات کو پورا کرنے کے لئے ختم کردی ہے. لیکن پرانی عمر یا عمر کی آخری رکاوٹ میں وہ انہیں ملیں گے کہ ان کی پوری زندگی ضائع ہوگئی تھی. پوری زندگی گزارنے کے بعد بھی، انہیں کچھ بھی نہیں ملا. نتیجہ صفر تھا. اس طرح کے لوگوں کو ان کی زندگی میں جسمانی لطف تلاش کرنے کے بعد بھی نامکمل، نامکمل اور واحد ہاتھ مل جائے گا. دوسروں کی پوری زندگی کو دیکھ کر، ہر انسان کو اس پر غور کرنا چاہئے.


اند وصولی کا سچا راستہ


 مندرجہ بالا تمام خوشیوں کا ووےچن کرنے کے باوجود، انسانی کو ایک سچے مالک کی تلاش کرنی چاہئے، جو اسے سکھ وصولی کی حقیقی راہ دیکھیے سکے | سچا جمعرات ہی خوش صحیح رہنمائی کر سکتا ہے | جس سے آپ کی زندگی حقیقی خوشیوں سے ترغیب پاکر ہو سکتا ہے | ایک سچا جمعرات ہی بتا سکتا ہے کہ، زندگی میں ابدی خوشی اور لطف کی وصولی کا صحیح راستہ سدگرو، ستو اور صحیفوں سے ہی مل سکتا ہے | سچا راستہ بتاتے ہوئے وہ آپ کو یہ بھی معلومات حاصل کرا دے گا کہ، واقعی ادريجني سکھ، جسمانی ذرائع، بھوگ- چیزوں سے پایا گیا خوشیوں، سچی خوشی ہے ہی نہیں، بلکہ یہ سکھ تو صرف خوشی کی ہرن مريچكا محض ہے | سچے خوشیوں کے حاصل کرنے کی خواہش میں اس دنیا کے بہت سے لوگوں نے اپنے قیمتی زندگی تباہ کر دیے ہے | ان متعدد کوششوں سے بھی انہیں سچی خوشی حاصل نہیں ہوا ہے | سچے سکھ کی وصولی کے لئے انسانی کو ستو سدگرو رشيو اور منيو کا ساندھي حاصل کرکے ہی پایا جا سکتا ہے |


 روح خدا کی روشنی شکل ہے


  بلاشبہ، خدا نے مخلوق کی تخلیق ہے | اس تخلیق کی خوبصورتی کے لئے اس نے درخت، پودے، ونسپتيا، سمندر، پہاڑ، ندیاں، سورج اور چاند وغیرہ تعمیر کیا ہے | ہر جيواتما میں اسی کا سناتن اقتباس موجود ہے | اس بدن کے اندر اندر واقع یہ روح، اوناشی اور مسلسل ہے | ہماری روح بھی خدا کا ہی روشنی حاصل کر اس جڑنے کی کوشش کرے | یہ جڑ نہیں، بلکہ ذی ہے | استره سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ سکھ اور لطف کی وصولی آسکتی چیزوں سے نہ ہوکر، لطف کی وغیرہ اناد لامحدود ذریعہ خدا سے جڑ کر ہی ہو سکتی ہے | جب ہم اپنی اتس میں پیدائش-جنماترو سے خوابیدہ، روح کو يوگاگن اور برمهاگن سے اور بار بار کی مشق سے بیدار کر نہیں لیتے ہیں تبتک ہمیں سچی خوشی حاصل نہیں ہو سکتا ہے | اگر ہم نے روح کو بیدار کر لیا پھر تو وراٹ برہم سے پرديپت اس آگ کی روشنی سے زندگی پرديپت ہو اٹھے گا | اور تب ہی انسانی زندگی میں حقیقی خوشی کے احساس ہو سکے گی |



 اسی شری


 ویب - gsirg.com


Comments

Popular posts from this blog

[ q/9 ] Tratamentul; O alternativă unică la sterilizare

web - gsirg.com

 Tratamentul; O alternativă unică la sterilizare

 Fiecare creatură din lume care a venit în această lume, el a câștigat definitiv copilarie, adolescenta, maturitate si batranete | Dintre acestea, dacă părăsim copilăria, atunci în fiecare etapă a vieții, fiecare creatură suferă de dorința sexuală. Cu excepția unui om determinat generație apel la alte creaturi, dar omul este o ființă care, în 12 luni ale anului, 365 de zile, 24 de ore, poate cicălitoare sex în orice moment | Cea mai dificilă sarcină a ființelor umane în această lume este să câștige "Cupid". Fiecare bărbat și femeie din această lume este absorbit de toți muncitorii și începe să facă nenorociri teribile în această lume. Se estimează că doar 70% din criminalitatea mondială este legată de acest lucru.


 Libido o tulburare puternică


  Cauza nașterii diferitelor tipuri de infracțiuni este dorința. Femeile și bărbații care suferă de această dorință sexuală nu ezită să facă diferite tipuri de crime în ac…

कबिरा शिक्षा जगत् मा भाँति भाँति के लोग।।भाग दो।।

प्रिय पाठक गणों आपने " कबीरा शिक्षा जगत मां भाँति भाँति के लोग ( भाग-एक ) में पढ़ा कि श्रीमती रामदुलारी तालुकेदारिया इण्टर कालेज सेंहगौ रायबरेली की प्रधानाचार्या, प्रबंधक, लिपिकों आदि के द्वारा किस प्रकार शिक्षा सत्र 2015--16 तथा शिक्षा सत्र2014--15 मे किस प्रकार लगभग उन्यासी छात्रों को फर्जी ढ़ंग से प्रवेश दिलाया गया । बाद मे इन्हीं छात्रों को अगले वर्ष इण्टर कक्षा की परीक्षा दिला दी गई। इसके लिए फर्जी कक्षा 12ब3 बनाई गई। बाकायदा फर्जी छात्रों का उपस्थिति रजिस्टर भी बनाया गया। परन्तु सभी छात्रों से प्रथम तथा द्वितीय वर्ष की कक्षाओं मे निर्धारित विद्यालय फीस लेने के बावजूद भी इसका विद्यालय के रजिस्टर पर इन्दराज नही किया गया। यह अनुमानित फीस लगभग साढ़े चार लाख रुपये के आसपास थी जिसे उपरोक्त अधिकारियों / विद्यालय के शिक्षा माफियाओं द्वारा अपहृत / गवन कर लिया hi गया। यथोचित कार्रवाई हेतु इस सम्पूर्ण विवरण को प्रार्थना पत्र मे लिखकर अपर सचिव के क्षेत्रीय कार्यालय इलाहाबाद को दिनाँक 25 /05 2016 को भेजा गया।
अब हम आपको इसके शर्मनाक पात्रों का परिचय करवा देते हैं।
       😢शर्मनाक…

पुराने बीजो का संरक्षण

नये खाद्यान्न बीजों या शंकर बीजों के आगमन के साथ खाद्यान्नों का उत्पादन अवश्य बढ़ा है।जिसके लिए हमारे कृषि वैज्ञानिक अवश्य ही बधाई के हकदार हैं।आज हम सवा अरब से अधिक लोगों को भरपेट भोजन देनें के अलावा निर्यात भी कर रहे हैं।जिस कारण हमें अन्तर्राष्ट्रीय स्तर पर अधिक अन्तर्राष्ट्रीय मुद्रा कोष प्राप्त हो रहा है।लेकिन भारतीय किसानों द्वारा अन्धाधुंध यूरिया और अन्य उर्वरकों तथा कीटनाशकों के प्रयोग के कारण कुछ देशों का बासमती चावल के आर्डर वापस लेना पड़ा है।जिसके कारण हमें अन्तर्राष्ट्रीय स्तर पर शर्मिंदगी उठानी पड़ी है।जो अवश्य ही चिन्ता का विषय है।कृषि वैज्ञानिकों द्वारा मृदा जांच द्वारा किसानों को प्रशिक्षित कर आवश्यक रसायनों के प्रयोगों के लिए किसानों को प्रशिक्षित किए जानें की आवश्यकता है।     हमारे पुराने जमाने के किसानों द्वारा पुराने बीजों एवं गोबर की खाद तथा खली से उत्पादित खाद्यान्नों एवं सब्जियों में जो गजब का स्वाद एवं सुगंध मिलती थी वह अब नये बीजों एवं उर्वरकों एवं कीटनाशकों से उत्पादित खाद्यान्नों एवं सब्जियों में नहीं पाई जाती है।वह स्वाद,सोंधापन, सुगंध अब धीरे-धीरे गायब होती …